Haunted Places in Islamabad| Islamad ki Purisrar Maqamat.

Video is ready, Click Here to View ×


In this video I am going to talk about some Haunted Places in Islamabad Probably you don’t know about.
Hope you Enjoyed…
►Follow us on YouTube:
►Follow us on Twitter:
►Follow us on Facebook page:

SOME IMAGES ARE USED AS ILLUSTRATIONS FOR EDUCATIONAL PURPOSE UNDER FAIR…

25 Comments

  1. لطیف آباد میں ایک دن ایک مریض کو لایا گیا جس کو دورے پڑتے تھے اور جس کے متعلق مشہور تھا کہ غوث پاک کی روح مبارک اس کے جسم میں داخل ہوتی ہے لوگ اس سے کافی عقیدت رکھتے ہیں جب میں نے آیت الکرسی پڑھ کر پھونکی تو اس کا چہرہ سرخ اورآنکھیں بڑی بڑی ہو گئیں ۔کہنے لگا پہچانو میں کون ہوں۔میں نے کہا خود ہی بتا دو۔کہنے لگا میں غوث پاک ہوں ۔کشف کے ذریعہ پتہ چلا کہ یہ ایک شیطان جن ہے جو غوث پاک بن کر سادہ لوح مسلمانوں کو دھوکہ دیتا رہتا ہے ۔اس قسم کے کئی مریض آئے ۔جن میں بہتات عورتوں کی تھی ۔لطیف آباد نمبر 11سے ایک بیس بائیس سالہ نوجوان لایا گیا،اس کی زبان میں یہی الفاظ تھے کہ میں محمد رسول اﷲ ہوں ۔گناہ گاروآؤاپنے گناہ بخشوالو۔وہ لڑکا کسی وظیفہ سے رجعت میں آگیا تھا ۔ایسے واقعات تو بہت ہیں لیکن ان کے بتانے کا مقصد یہی ہے کہ ہزاروں لوگ اس قسم کے دھوکوں میں مبتلا ہیں۔ان دھوکوں سے بچنے کا واحد ذریعہ ذکر اسم ذات ہے ۔
    یونیورسٹی سے ایک مریضہ کو لایا گیا ۔بیماری کی وجہ سے زندگی سے بیزار ہو چکی تھی ہر قسم کے علاج سے کوئی افاقہ نہ ہو رہا تھاکشف کے ذریعہ پتہ چلا کہ جنات نے اس کو مریضہ بنا رکھا ہے اس کے باورچی کھانے میں ایک اُلوّ بیٹھا نظر آیا ہم نے اُلوّ کو پکڑا اور ختم کر دیا ۔شام کوبے شمار جنات حملہ آور ہو ئے اور اُلوّ کی واپسی کا مطالبہ کرنے لگے ۔ہمارے ساتھ بھی کافی سارے جنات اور موئکلات تھے ۔مقابلہ شروع ہو گیا۔کچھ ہمارا نقصان اور کچھ ان کا نقصان ہو ا۔وہ جاتے وقت کہہ گئے ہم پھر آئیں گئے ۔صبح لاکھوں کی تعداد میں جنات بدارواح اور خبیث قسم کی چیزیں حملہ آور ہوئیں ۔خوب مقابلہ ہوا دونوں طرف سے بھاری نقصان ہوا اور پھر وہ شام چھ بجے حملہ کرنے کو کہہ گئے۔شام کو ان کے ساتھ ایک بھاری فوج تھی پتہ چلا کہ یہ فوج ابلیس ہے ۔اب بڑے زورو شور سے مقابلہ ہوا۔دیکھا آسمان پر عجیب قسم کے جہاز ہماری فوج پر بمباری کر رہے تھے ہماری فوج بھی مورچوں سے ان پر بمباری کر رہی تھی۔ میں نے سوچا کہ جنات کے پاس جہاز کہاں سے آگئے اور یہ آناً فاناً مورچے کیسے کھد گئے اور یہ مشین گنیں وغیرہ کہاں سے آگئیں۔ سمجھا شاید اسی دوران ہندوستان پاکستان کی یا عالمی جنگ چھڑگئی ہے پھر سمجھا کہ شاید نظر کو دھوکہ ہو گیا ہے ۔اتنے میں ایک گولہ میری ٹانگ پر لگازخم وغیرہ تو نہ ہوا البتہ ٹانگ میں شدید درد شروع ہوگیا۔ اب وہ گولے موکلات کی مخلوق پر لگتے وہ زخمی ہو جاتے۔ زخمیوں کو کچھ موکلات اٹھا کر برزخ کی طرف لے جاتے اور پھر وہ تھوڑی دیر کے بعد تندرست ہو کر آجاتے ، میں نے دیکھا میرے جُسّے بھی زخمی ہوئے اور انہیں اٹھا کر ایک زمین دوز کمرے میں لے جاتے وہاں باقاعدہ عربی لباس پہنے نرسیں اور ڈاکٹر موجود ہوتے جو ان کی مرہم پٹی کرتے اور جنّات کو گولہ لگتا تو وہ موقع پر ہی مر جاتے۔ دوبارہ زندہ نہ ہو سکتے تین دن یہ لڑائی جاری رہی اور آخر بغیر جیت ہار کے ختم ہو گئی ۔ لڑائی کے بعد پتہ چلا کہ یہ لڑائی ابلیس کا اور تمہارا مقابلہ ہے جتنا جلد ہو سکے عمل تکسیر پڑھ لو اور آج رات ہی عمل تکسیر پڑھنے کا ارادہ کر لیا۔ رات کو جنگل میں گیا قبر مبارک کا نقشہ بنایا اور اپنے چاروں طرف حصار کر لیااور حصار سے لے کر حدِ نظر تک جنّات اور مؤکلات پھیل گئے اور میرے سر پر بھی نگرانی کرنے لگے اذان کے بعد جب سورہ مزمّل پڑھنے لگاتو ایک اونٹ حصار کے اندر سے ہی زمین سے نکلااس کی گردن بہت لمبی اور منہ بہت چوڑا تھاآہستہ آہستہ میرے سر کی طرف لپکا اور میرا سر گردن تک اس کے منہ میں آ گیا ۔ باقاعدہ اس کے دانت مجھے اپنے گلے میں چبھے ہوئے محسوس ہوئے اور میں موت سے بے نیاز سور ۃ مز مّل پڑھتا رہا ۔ وہ دانت دبانے کی کوشش کرتا لیکن دانتوں کی صرف رگڑ ہی گردن پر محسوس ہوتی ۔ جب سورۃ مزمّل ختم ہوئی تو ایسے لگا جیسے کسی نے اسے کوڑا مارا ہو اور وہ چیختا ہو ا بھاگا۔ اس کی چیخ سے جنّات اور موئکلات ہوشیارہوئے لیکن وہ کسی کو بھی نظر نہ آیا پتہ چلا کہ ابلیس اس عمل کی رکاوٹ کے لئے آیا تھا جو کامیاب نہ ہو سکااب میری ہمت بڑھی اور باطنی طور پر جنّات اور موئکلات کو ساتھ لیا اور اس پر حملہ کرنے کی کوشش کی ۔ پہاڑوں میں بڑے بڑے محل اور قلعے نظر آئے ۔ وہاں کے پہرہ داروں سے مقابلہ ہوتا اکثر بھاگ جاتے لیکن ابلیس کہیں نہ ملتا ۔ ایک دفعہ اس تک ایک قلعے میں پہنچ گئے لیکن وہ طوطا بن کر اڑ گیا ۔ ہم نے بھی اس کا تعاقب نہ چھوڑا ۔ تین دن سے بھوکے پیاسے تھے یہی دھن تھی کہ ابلیس کو پکڑ کر مار اجائے تاکہ ہر کسی کا چھٹکارا ہو جائے صحرا میں بیٹھا کوئی تدبیر سوچ رہا تھا ۔ دیکھا کچھ بزرگ گھوڑوں پر سوار میری طرف آئے ۔ کہنے لگے ادھر کیا ڈھونڈتا ہے ۔ میں نے کہا ابلیس کو پکڑ کر ختم کرنے کا ارادہ ہے وہ بہت ہنسے اور کہنے لگے ارے نادان تو کس چکر میں لگ گیا اگر اس کا مرنا ہوتا تو کیاہم چھوڑ دیتے ۔ بات میری سمجھ میں بھی آئی ۔ ان کا شکریہ ادا کیا اور واپس چھونپڑی میں پہنچ گیا۔ میں نے اپنے آپ کو مضبوط کرنے کے لئے جُسّوں کے ذریعے عمل تکسیر پڑھنا شروع کر دیا اور ساتھ ہی رسالہ روحی شریف اور دُعا ئے سیفی کا وظیفہ شروع کر دیا عمل تکسیر کا فائدہ یہ دیکھا کہ ہر دربار والے بزرگ نے ہماری مناسب امداد کری بلکہ ہمارا کوئی بھی شخص کسی دربار پر جاتا اہل قبر اس کی مدد کرتے اور اس عمل کی وجہ سے کشف القبور کا سلسلہ پھیلا۔
    رسالہ روحی شریف کا یہ فائدہ دیکھا کہ مصیبت کے وقت ہفت سلطانوں کی ارواح مدد کو پہنچتیں۔ دوسرا فائدہ یہ دیکھا کہ اگر کوئی آسیب دم وغیرہ سے نہ بھاگتا اگر اس پر رسالہ روحی پڑھا جاتا تو ضرورہی ہٹ جاتا ۔ تیسر ا فائدہ رسالہ روحی کے پڑھنے والوں کو رجعت کا خطرہ نہیں ہے ۔ ایک رات لیٹا ہوا تھا ان چناؤ والے تیرہ آدمیوں میں سے ایک آدمی میرے سامنے آگیا ۔ اس نے مجھ سے ہاتھ ملایا ایسا لگا کہ میرے اندر سے کوئی چیز کھینچ رہا ہے ۔ میں نے چھوڑانے کی کوشش کی لیکن اپنے آپ کو بے بس پایا اتنے میں ایک تلوار اس کے ہاتھ کی طرف بڑھی اور اس نے فوراً ہاتھ ہٹالیا اور کمرے سے نکل گیا۔ یہ تلوار دُعائے سیفی کا عمل تھاجو میری مدد کو پہنچا۔ میں نے ان تینوں عملوں پر کئی بار مختلف طریقوں سے تجربہ کیا جو کامیاب ہوا اور پھر ان تین عملوں کی اجازت اپنے ذاکروں کودی تاکہ وہ بھی اس سے مستفید ہو سکیں۔

  2. Mera ghar kachnar park ke samney he ye pehle bulkul jungle the bad mein CDA ne ye park banaya he main yahan roz walk karta hon main ny kabhi bhe esi bat mehsos nahi ki ye sab ghalat he. Rat ke okat mein yahan aksar PIGS zaror hote hain.

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*